دیگر پوسٹس

تازہ ترین

ماحولیاتی آلودگی کے برے اثرات!!

کدھر ہیں ماحولیاتی آلودگی اور انڈسٹریز اینڈ کنزیومرز کے محکمے جو یہ سب کچھ دیکھتے ہوئے بھی خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں آبادی بیشک تیزی سے بڑھ رہی ہے اور اپنا گھر ہر کسی کی خواہش اور ضرورت ہے رہائشی منصوبوں کی مخالفت نہیں کرتا اور ہائی رائزنگ عمارتوں کی تعمیر کو ضروری سمجھتا ہوں تاہم ہائی رائزنگ عمارتوں کی تعمیر اور اس سے جڑے ہوئے ضروری لوازمات اور معیار پر سمجھوتہ نہیں ہونا چاہئے اور باقاعدگی سے ان ہائی رائزنگ عمارتوں کی تعمیر کے وقت نگرانی کی جانی چاہئے

متبادل پر سوچیں!! سدھیر احمد آفریدی کی تحریر

یہ بلکل سچی بات ہے کہ کوئی بھی مشکل...

بیوٹی پارلر میں کام کرنیوالی لڑکی جس کی پرورش خالہ نے کی اور زندگی بھائی لے لی

ذرائع کے مطابق مقتولہ کو بچپن میں اس کی خالہ نے گود لے لیا تھا اور بالغ ہونے تک وہ اپنی خالہ کے پاس رہتی تھی پھر وہ ایک ڈاکٹر کے ساتھ بطور نرس کام کرتی رہی اس دوران وہ بیرون ملک چلی گئی جہاں سے دو ہفتے قبل واپس آئی اور اپنے منہ بولے ماموں غلام مصطفیٰ ولد روشن خان سکنہ سجی کوٹ روڈ قلندرآباد کی وساطت سے گوجری چوک میں فلیٹ کرائے پر لے کر رہنے لگی ۔

فاٹا انضمام کے معاملے پر مشران کی سپریم کورٹ سے مداخلت کی اپیل

ضلع خیبر سے جبران شنواری بالجبر انضمام اور پولیس نظام...

27 فروری ،اپنی مرضی اور مقام پر دشمن کو جواب دیا ،عمران خان

وزیراعظم عمرا ن خان نے 2019 میں آج ہی کے دن پاکستان کے خلاف بھارت کی غیرقانونی فوجی مہم جوئی اور فضائی حملوں کا منہ توڑ جواب دینے کے دو سال مکمل ہونے کے موقع پر پوری قوم کو مبارکباد دی ہے۔

سماجی روابط کی ویب سائیٹ پر اپنے متعدد ٹویٹس میں مسلح افواج کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے پختہ عزم کے ساتھ اپنی مرضی کے مطابق منتخب وقت اور مقام پر دشمن کو بھرپور جواب دیا۔

امن ترجیح‌،کسی نے للکارا تو بھرپور جواب ملے گا ،آئی ایس پی آر 

وزیر اعظم عمران خان دو روزہ دورہ پر سری لنکا پہنچ گئے

ریڈیو پاکستان کیمطابق انہوں نے کہا کہ ہم نے پکڑے گئے بھارتی پائلٹ کی واپسی کے ذریعے بھارت کے غیرذمہ دارانہ فوجی طاقت کے جواب میں عالمی برادری کے سامنے پاکستان کی جانب سے ذمہ دارانہ طرزعمل کا مظاہرہ کیا۔
عمران خان نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ امن کی حمایت کی ہے اور تمام تصفیہ طلب معاملات کے حل میں پیشرفت کیلئے تیار ہیں


کنٹرول لائن پر جنگ بندی کی بحالی کا خیرمقدم کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہاکہ سازگار ماحول میں مزید پیشرفت کا تمام تر دارومدار بھارت پر ہے۔ انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق کشمیریوں کو ان کا دیرینہ حق خودارادیت دینے کیلئے بھارت ضروری اقدامات کرے۔